Quran Pak Ki Fazeelat

Quran Pak Ki Fazeelat

قرآن پاک کی فضیلت
Quran Pak Ki Fazeelat

ایک صحابی رضہ اپنے گھر میں تہجد کی نماز میں قرآن پاک پڑھ رہے ہیں ۔ طبیعت پرکیف ہے ذرا اونچی آواز سے قرآن پڑھنے کو جی چاہتا ہے۔ گھر کا صحن چھوٹا ہے ، گھوڑا بھی بندھا ہے اور ایک چارپائی پر بچہ بھی سویا ہوا ہے۔ جب اونچا پڑھتے تو گھوڑا بدکنے لگتا ہے دل میں ڈر سا محسوس ہوتا ہے کہ کہیں بچے کو تکلیف نہ پہنچادے ۔ لات نہ ماردے پھر آہستہ قرآن پڑھنے لگ جاتے ہیں ۔ تھوڑی دیر کے بعد پھر طبیعت مچلتی ہے تو اونچا پڑھتے ہیں گھوڑا بدکتا ہے پھر آہستہ پڑھنے لگ جاتے ہیں بس یہی کچھ تقریبا ساری ہوتا رہا ۔ جب انہوں نے صبح کے وقت دعا کے لئے ہاتھ اٹھائے تو ان کی نگاہ آسمان پر پڑی ، کیا دیکھتے ہیں کہ کچھ روشنیاں نہایت تیزی کے ساتھ ان کے سر سے دور آسمان کی طرف جارہی ہیں ۔ حیران ہوئے کہ کیاہے؟ چنانچہ نبی اکرم ﷺ کی خدمت میں حاضر ہوئے اور عرض کیا کہ اے اللہ کے نبی ﷺ رات میرے ساتھ یہ معاملہ ہوتا رہا ۔ اونچا پڑھتا تھا تو ڈر محسوس ہوتا تھا کہ بچے کو تکلیف نہ پہنچ جائے اور آہستہ پڑھتا تھا تو پھر طبیعت مچلتی تھی کہ اونچا پڑھوں۔ جب میں نے دعا کے لئے اٹھائے تو نگاہ آسمان کی طرف اٹھی ۔ میں نے کچھ روشنیاں دور جاتی ہوئی دیکھیں۔ 

اللہ تعالیٰ کے محبوب ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ یہ اللہ تعالیٰ کے فرشتے تھے جو تیرا قرآن سننے کے لئے آسمان سے نیچے اتر آئے تھے۔ اگر تم اونچی آواز سے پڑھتے رہتے تو آج مدینہ کے لوگ ان فرشتوں کو اپنی آنکھوں سے دیکھ لیتے ۔ وہ فرش پر قرآن پڑھتے تھے تو عرش کے فرشتے اتر آتے تھے۔